فرانس کیساتھ سفارتی تعلقات ختم کرکے سفیر کو فور ی طور پہ مُلک بدر کیا جائے: آئی ایس او

علی اویس زیدی نے کہا کہ عالمی امن کے نام نہاد ذمہ داران فرانسیسی صدر کے اشتعال انگیز اور دہشتگردانہ رویے کا نوٹس لیں۔

 فرانس میں گستاخانہ خاکوں کی اشاعت کھُلی دہشگردی ہے آزادی اظہار کے نام پر اس طرح کے خوفناک اقدمات ناقابل برداشت ہیں۔

ان خیالات کا اظہار آئی ایس او پاکستان کے مرکزی جنرل سیکرٹری علی اویس زیدی نے کیا۔ انہوں نے مزید کہا کہ فرانس میں گستاخانہ خاکوں کی اشاعت اور فرانسیسی صدر کے جارحانہ رویہ نے امت مسلمہ کے دِلوں کو مجروح کیا ہے۔ آئے روز اظہار آزادی رائے کے نام پر نفرت انگیز اقدامات ناقابل برداشت ہیں۔

انہوں نے مطالبہ کیا کہ فرانسیسی سفیر کو فوری طور پر ملک بدرکیا جائے اور فرانس کیساتھ سفارتی تعلقات فوری طور پر ختم کیے جائیں۔

علی اویس زیدی نے کہا کہ عالمی امن کے نام نہاد ذمہ داران فرانسیسی صدر کے اشتعال انگیز اور دہشتگردانہ رویے کا نوٹس لیں۔

علی اویس زیدی کا مزید کہنا تھا کہ مغرب نے آزادی اظہار کے نام پر مذہبی شخصیات کی توہین کو وطیرہ بنالیا ہے اقوام متحدہ کے بین الاقوامی چارٹر میں مذہبی شخصیات اور مذہبی جذبات کے حوالے سے قوانین موجود ہیں تمام مذاہب کے ماننے والے محسن انسانیت کا احترام کرتے ہیں کیونکہ انکی ذات کا پیغام تمام انسایت کا اولین منشور ہے ۔ملت تشیع کا ماضی عشق رسول سے سرخ ہے ہم عاشق رسول شہید علی رضا تقوی کی قربانی کو فراموش نہیں کرسکتے ہیں جنہوں نے گستاخانہ خاکوں کی اشاعت کے خلاف احتجاج میں اپنی جان کا نظرانہ پیش کر دیا رسول اکرمۖ کی شان میں گستاخی ناقابل برداشت ہے فرانسسی صدر کو مسلم برادری سے معافی مانگنے چاہئے ۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ مشرق وسطی میں اٹھنے والی اسلامی بیداری سے مغرب خوفزدہ ہے داعش کے نام پر اسلام کو بدنام کیا گیا اور ایک بار پھر گستاخانہ خاکے شائع کر کے مسلمانوں کی غیرت کو للکارا جا رہا ہے ،سیکولر طاقتیں اسلام کے خلاف متحد ہیں۔عالمی اسلامی طاقتوں کو متحد ہوکر سیکولر طاقتوں کامقابلہ کرنا ہوگا۔