چابہار اقتصادی زون میں پاکستان کی سرمایہ کاری کیلیے ایران کی تیاری

اسلامی جمہوریہ ایران نے ایرانی جنوبی بندرگاہ چابہار کے خصوصی اقتصادی زون میں پاکستان کی سرمایہ کاری کے لیے اپنی آمادگی کا اعلان کیا۔

 اسلامی جمہوریہ ایران اور پاکستان کی مشترکہ بارڈر ٹریڈ کمیٹی کے دو روزہ اجلاس میں ایرانی وفد کے سربراہ نے چابہار اسپیشل اکنامک زون، میرجاوہ اور ریمدان کے نئے سرحدی گزرگاہ میں  پاکستانی تاجروں اور کمپنیوں کی سرمایہ کاری کے لئے ہمارے ملک کی تیاری کا اعلان کیا۔

کوئٹہ میں مشترکہ بارڈر ٹریڈ کمیٹی کے آٹھویں اجلاس میں شرکت کے لئے سیستان اور بلوچستان کی ڈپٹی کوآرڈینیٹر برائے معاشی امور اور ہمارے وفد  کی سربراہ 'ماندانا زنگنہ نے اعلان کردیا کہ ایران کے چابہار خصوصی اقتصادی زون، میرجاوہ اور ریمدان کے دروازے پاکستانی سرمایہ کاروں کے لئے کھلے ہیں۔

انہوں نے اگلے ماہ کے اندر ایران اور پاکستان کے درمیان سرحدی گزرگاہیں خاص طور پر "رمدان گبڈ" گیٹ کے شروع کرنے اور اس سلسلے میں دونوں فریقوں کے معاہدے پر بھی زور دیتے ہوئے کہا کہ دونوں ممالک خاص طور ایرانی صوبے سیستان و بلوچستان اور پاکستانی صوبے بلوچستان کے مابین مناسب اور  اچھی صلاحیتیں موجود ہیں تو ہمیں ان مواقع سے نقل و حمل ، تجارت اور سیاحت کے شعبوں میں فائدہ اٹھانا چاہئے۔

 

انہوں نے سرحدی منڈیوں کے قیام، جس سے حوالے سے پاکستانی وزیر اعظم نے حالیہ مہینوں میں خصوصی ہدایات جاری کی ہیں، میں حصہ لینے کے لئے ہمارے ملک کی تیاری کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ ایران نئی سرحدی منڈیوں کی تعمیر میں اپنے تجربات کو پاکستان کے لئے شیئر کرسکتا ہے۔