کائنات کے گوشہ و کنار میں مولائے متقیان امیرالمومنین حضرت علی ابن ابیطالب علیہ السلام کا ماتم

 

مولائے متقیان امیرالمومنین حضرت علی ابن ابیطالب علیہ السلام کے ایام شہادت اور یوم ضربت پر پورا اسلامی جمہوریہ ایران سوگوار و عزادار ہے جبکہ عراق پاکستان اور ہندوستان سمیت پوری دنیا میں مولائے کائنات کے ایام شہادت کی مناسبت سے عزاداری و سوگواری کا سلسلہ جاری ہے اس درمیان ایران اور دنیا کے سبھی ملکوں میں پہلی شب قدر کے اعمال انجام دیئے گئے۔

 انیس رمضان المبارک سن چالیس ہجری قمری کی صبح دنیا کے شقی ترین شخص ابن ملجم مرادی نے کائنات کی بہترین ہستی، پیغمبراسلام کے وصی و جانشین، مولائے کائنات حضرت علی ابن ابیطالب علیہ السلام کے فرق مبارک پر جب آپ حالت نماز میں تھے زہر سے بجھی ہوئی تلوار سے ضرب لگائی اور ارکان ہدایت کو منہدم کر دیا-

ضربت لگتے ہی ہاتف غیبی نے آواز دی تھی خدا کی قسم ارکان ہدایت منہدم ہو گئے- اسی لئے انیس رمضان کی صبح کو صبح ضربت کے نام سے یاد کیا جاتا ہے-

اس مناسبت سے ایران کے سبھی چھوٹے بڑے شہروں میں شب انیس سے ہی مجالس و عزاداری کا سلسلہ شروع ہو گیا ہے- مشہد مقدس میں حضرت امام علی رضا علیہ السلام کے حرم مطہر میں ایران کے گوشہ و کنار اور دنیا کے مختلف ملکوں سے لاکھوں کی تعداد میں زائرین اور سوگوار مجالس غم برپا کر کے کائنات کی مظلوم ترین ہستی امیرالمومنین حضرت علی علیہ السلام کی مظلومیت پر اشک ماتم بہا رہے ہیں-

قم میں حضرت فاطمہ معصومہ سلام اللہ علیھا کے حرم مطہر میں بھی مجالس غم برپا ہیں اور علما و ذاکرین حضرت علی علیہ السلام کے فضائل و مناقب بیان کر کے روزہ داروں اورعزاداروں کو مثاب کر رہے ہیں-

عراق کے شہروں نجف اشرف اور کوفہ میں بھی لاکھوں سوگوار و عزادار مولائے کائنات کا ماتم کرنے کے لئے وہاں پہنچے ہوئے ہیں-

صبح ضربت کے موقع پر مسجد کوفہ میں دسیوں ہزار عزاداروں نے نوحہ و ماتم کر کے مولائے کائنات کی مصیبت پر گریہ کیا- نجف اشرف میں بھی لاکھوں سوگوار و عزادار اس موقع پر عزاداری میں مصروف ہیں-

پاکستان اور ہندوستان میں جناب امیر کے ایام شہادت کی مناسبت سے شبیہ تابوت برآمد کئے گئے اور ہرجگہ مجالس کا اہتمام کیا گیا ہے-

اس درمیان شب ضربت اور پہلی شب قدر میں ایران اور دنیا کے سبھی ملکوں میں کروڑوں مسلمانوں نے اعمال شب قدر انجام دیئے اور قرآن کو اپنے سروں پر رکھ کر اپنے معبود کے حضور خالصانہ انداز میں راز ونیاز کیا اور اسلام و مسلمین کی سربلند اور امام عصر کے ظہور میں تعجیل کی دعا کی- 

ایران کی فضا پوری رات سحر تک اسمائے اعظم الہی اور الغوث الغوث کی دعاؤں سے معطر رہی۔