وزیر اعظم کی ہندوستان کو ایک بار پھر امن کی پیشکش

پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان نے ہندوستان کو ایک بار پھر امن کی پیشکش کی ہے جبکہ ہندوستانی وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ ان کا ملک پاکستان کے ساتھ کشیدگی میں اضافہ نہیں چاہتا۔

 پاکستان کے وزیراعظم عمران نے قومی ٹیلی ویژن سے اپنے نشری خطاب میں کہا ہے کہ پاکستانی فوج کا آج کا اقدام ملکی دفاع کے حوالے سے عوام کا اعتماد حاصل کرنے کی غرض سے ضروری تھا۔

انہوں نے کہا کہ ہم یہ ثابت کرنا چاہتے تھے کہ پاکستان اپنے دفاع کی پوری توانائی رکھتا ہے۔

پاکستان کے وزیراعظم نے اس بات پر زور دیتے ہوئے کہ امن کے لیے ابھی دیر نہیں ہوئی ہے، کہا کہ اسلام آباد نے پلوامہ واقعے کے بعد بھی ہندوستان کو مشترکہ تحقیقات کی پیشکش کی تھی ہندوستان نے عجلت میں جنگ کا راستہ منتخب کیا۔

دوسری جانب ہندوستان کی وزیر خارجہ سشما سوراج نے چینی اور روسی عہدیداروں کے ساتھ ملاقات میں کہا ہے کہ ان کا ملک، پاکستان کے ساتھ کشیدگی میں اضافے کا خواہاں نہیں۔

سہ فریقی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے ہندوستان کی وزیر خارجہ نے پاکستانی علاقے میں قائم دہشت گردوں کے مبینہ کیمپوں پر حملے کا دفاع کرتے ہوئے کہا کہ یہ حملہ دہشت گردی کے حملوں سے بچنے کے لیے پیشگی اقدام تھا۔

ہندوستان نے دعوی کیا ہے کہ شمال مغربی پاکستان میں منگل کے روز کیے جانے والے فضائی حملے میں جیش محمد اور لشکر طیبہ کے تقریبا تین سو دہشت گرد مارے گئے ہیں۔

اس حملے کے بعد، بدھ کے روز ہندوستان اور پاکستان کی فضائیہ کے درمیان ہونے والی محاذ آرائی میں ہندوستانی فضائیہ کے دو اور پاکستانی فضائیہ ایک طیارہ تباہ ہو گیا۔